صوبائی حلقہ پی پی 51 وزیرآباد میں ضمنی الیکشن کا میدان سج چکا ھے

Spread the love

وزیرآباد (طارق ملک بیورو چیف یو جی نیوز ) صوبائی حلقہ پی پی 51 وزیرآباد میں ضمنی الیکشن کا میدان سج چکا ھے. مسلم لیگ ن کی جانب سے مرحوم ایم پی اے شوکت منظور چیمہ کی بیگم طلعت محمود چیمہ.پی ٹی آئی کے چوہدری محمد یوسف جماعت اسلامی کے ناصر محمود کلیر اور تحریک لبیک کے ناصر محمود سیفی قسمت آزمائی کر رہے ھیں. صوبائی اسمبلی کا یہ حلقہ گزشتہ چار انتحابات کے نتائج کے اعتبار سے مسلم لیگ ن کا گڑھ سمجھا جاتا ھے. 2018 کے الیکشن میں جماعت اسلامی کے مضبوط امیدوار محمد مشتاق بٹ نے 21000 ، پی ٹی آئی کے شبیر اکرم چیمہ نے 27000 ،جب کہ مسلم لیگی امیدوار شوکت منظور چیمہ نے ریکارڈ مارجن کے ساتھ 60000 سے زائد ووٹ حاصل کیے تھے. الیکشن کے بعد پی ٹی آئی حکومت نے قومی اسمبلی کا الیکشن ہارنے والے محمد احمد چٹھہ کو صوبائی ایڈوائزر کے عہدہ سے نواز کر حلقہ میں اپنے پاوں جمانے کی بھر پور کوشش کی اور موجودہ الیکشن ان کی مقبولیت پرکھنے کا پیمانہ ثابت ہوں گے. مسلم لیگ اور جماعت اسلامی کے ورکرز اور مقامی راہنما ٹیموں کی شکل میں اپنے ووٹرز کو متحرک کرنے اور پوزیشن مضبوط بنانے کے لئے سرگرم ہیں . جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار وزراء مشیروں اور مقامی با اثر سیاسی سماجی شخصیات کے لشکر کے ساتھ ووٹروں کے دل جیتنے کے لئے کوشاں ھیں ترقیاتی پراجیکٹس کے ذریعے لوگوں کی توجہ مہنگائی اور بجلی کے ظالمانہ بلوں سے ہٹانے کا حربہ بھر پور انداز میں استعمال کیا جا رھا ھے. مسلم لیگ والے اپنے سابقہ ووٹ بنک کے زعم میں مبتلا ھیں اور پی ٹی آئی کے امیدوار شہری حلقہ کے ووٹرز اور اپنی برادری کو طاقت سمجھ رہے ہیں جبکہ جماعت اسلامی والے منتظم انداز میں اسلام اور شرافت کے نام پر ووٹ اپنے نام کرنے کے مشن پر گامزن ہیں. تحریک لبیک کے ناصر سیفی شاید کسی معجزے پر تکیہ کئے بیٹھے ہیں اور انتحابی مہم میں سست روی کا مظاہرہ کر رہے ھیں. عوامی سطح پر انتحابی جوش و خروش کا فقدان ہے اور لوگ روٹی روزی کی فکر میں مست نظر آتے ہیں.آئندہ دس بارہ دن میں انتحابی صورت حال واضع ہو سکے گی کہ آیا حلقہ کے ووٹرز اپنی سابقہ رائے پر قائم ہیں یا اپنا وزن کسی دوسری جماعت کے پلڑے میں ڈالتے ھیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں