جہلم نویں کلاس کی طالبہ اغواء کے بعد بازیاب،

Spread the love

جہلم(چوہدری عابد محمود +عامرکیانی)جہلم نویں کلاس کی طالبہ اغواء کے بعد بازیاب، تھانہ سٹی پولیس نے والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا،ملز مان کی گرفتاری کے لیے پولیس نے چھاپے مارنے شروع کر دیئے، آخری طلاعات آنے تک کوئی گرفتاری عمل میں نہ لائی جا سکی، تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز گورنمنٹ گرلز ہائی سکول کے باہر سے مبینہ طور پر اغواء ہونے والی نویں جماعت کی طالبہ قراۃ العین کو چند گھنٹوں بعد ہی بازیاب کروا لیاگیا، مغوی بچی کے والد نے تھانہ سٹی میں درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ صبح ساڑھے7 بجے سکول سے فون آیا کہ آپ کی بیٹی مسماۃ قراۃ العین دختر تصور حسین سکنہ کنتریلہ آج سکول نہیں آئی جبکہ قراۃ العین حسب معمول گھر سے سکول گئی اس سلسلہ میں تلاش شروع کر دی تو معلوم ہوا کہ سکول کے باہر سے بیٹی غائب ہوگئی ہے جس کی اپنے طور پر تلاش و پتہ جوئی کی گئی، معلوم ہوا کہ میری بیٹی کو مسمی بلال مظفر ولد مظفر حسین سکنہ کنتریلہ نے حرام کاری کے لئے اغواء کیا ہے تلاش کرنے پر وہ مجھے منڈی موڑ کے پاس ملا جس کو میں نے روکنا چاہا تو وہ مجھے دھکا دیکر ڈبل ڈور ڈالا جس کا نمبر 444 برنگ سیاہ پر جانب دینہ فرار ہونے میں کامیاب ہو گیاہے، میری بیٹی کو مظفر بلال مذکور نے گورنمنٹ گرلز ہائی سکول مشین محلہ نمبر 2 سے زبردستی اغواء کیا ہے جس پر تھانہ سٹی کے تفتیشی افسرا اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد ندیم نے زیر دفعہ 365Bت پ کے تحت مقدمہ درج کرکے ملزمان کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنے شروع کر دیئے ہیں۔ قابل زکر بات یہ ہے کہ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر شاکر حسین داوڑ کی خصوصی ہدایت پر تھانہ سٹی پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے محض چند گھنٹوں کے اندر ہی سکول کے باہر سے اغواء ہونے والی بچی کو اس کے گھر پہنچا دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں