سیدنا علی المرتضیٰ تاریخ کے سب سے بڑے قاضی اور چوتھےخلیفہ راشد تھے

Spread the love

اولڈہم (عارف چوہدری) پاسبان صحابہ برطانیہ کے چیئر مین محمد عمر توحیدی نے کہا ہے کہ علم و عمل کے کوہ گراں،صاحب ذو الفقار سیدنا علی المرتضیٰ رضی اللہ عنہ حضورﷺ کے چچازاد بھائی،اسلامی تاریخ کے سب سے بڑے قاضی اور چوتھےخلیفہ راشد تھے۔غزوہ تبوک کے علاوہ تمام جنگوں میں حضورﷺ کے ساتھ مردانہ وار حصہ لیا،اور کئی دین دشمنوں کو تہہ تیغ کرکے کفر پر اپنی شجاعت کی دھاک بٹھائی۔آپ ؓ کے فضائل و مناقب میں کثرت سےاحادیث مروی ہیں۔آپ کے حکمت بھرے ارشادات و فرمودات طالبان حق کے لئے مینارہ نور کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اکیس رمضان المبارک یوم شہادت علی المرتضی ؓ کےحوالے سے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ فرقہ واریت کے خاتمے کےلیے سیدنا علی کرم اللہ وجہہ کا اسوہ مشعل راہ ہے ۔حضور ﷺ کی وفات کے بعد انہوں نے ہر طرح سے خلفائے ثلاثہ رضی اللہ عنہم کا ساتھ دیتے ہوئےان کے وزیر و مشیر کی حیثیت سے کام کیا،سیدنا فاروق اعظمؓ جب کبھی مملکتی یا انتظامی امور کےسلسلے میں مدینہ سے باہرکاسفرکرتےتوآپؓ کومسند خلافت پربٹھاکرجاتے۔آپؓ کےاتقااورصداقت پسندی کایہ عالم تھاکہ سیاسی جہت میں اپنےشدیدمخالف سیدنا امیرمعاویہ ؓ کو اپنادینی بھائی کہہ کران کے کامل مومن ہونے کی گواہی دی۔ عمر توحیدی نے کہا کہ اسلام کے اس تابندہ اوردرخشاں ستارے کو ابن ملجم خارجی نےاس وقت اپنی زہر آلود تلوار کا نشانہ بنایاجب آپؓ”حی علی الصلوۃ”کی صدا بلند کرتے ہوئے نماز فجر اداکرنے کےلیےکوفہ کی جامع مسجدجارہے تھے۔آپؓ کی مظلومانہ شہادت کے ساتھ ہی زہدوتقوی اورشجاعت وبہادری کا سورج غروب ہوگیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں