لنڈی کوتل سی ایف سی سنٹر عملے کو فی الفور تبدیل کیا جائے

Spread the love

خیبر سے (امان علی شینواری)
لنڈی کوتل سی ایف سی سنٹر عملے کو فی الفور تبدیل کیا جائے، دو لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل بازار ذخہ خیل نادرا جیسے سہولت سے محروم ہیں، پچاس کلومیٹر دور سے انے والی خواتین شناختی کارڈز بنانے کی غرض پورا پورا دن انتظار کرکے کام کئے بغیر گھر واپس ہونا معمول بن گیا ہے ،شدید گرمی میں نادرا عملہ بازار ذخہ خیل کے خواتین کو خوار و ذلیل کرکے مختلف بہانے سے تنگ کرتے ہیں، قوم بازار ذخہ خیل کو الگ نادرا کی منظوری یا ہفتے میں دو دن مختص کیا جائے تاکہ آئے روز تکلیف سے بچ سکے. عطاء اللہ آفریدی کا پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب

لنڈی کوتل پریس کلب ڈسٹرکٹ خیبر میں تحصیل لنڈی کوتل کے دور افتادہ بازار ذخہ خیل سے تعلق رکھنے والے ویلج چئیرمین عطاء اللہ آفریدی، حاجی محمد، قدرت، لعل زر ،زرین آفریدی و دیگر نے پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لنڈی کوتل CFC سنٹر بازار ذخہ خیل کے لئے عذاب بن گیا ہے ائے روز شناختی کارڈز بنانے کی غرض سے سینکڑوں خواتین اتے ہیں لیکن کام کئے بغیر ساری دن انتظار کرکے مایوس اپنوں گھر لوٹ جاتیں ہیں جو ہمارے ساتھ ناانصافی ہے انہوں نے کہا کہ لنڈی کوتل سی ایف سی سنٹر عملہ ہمیں مختلف بہانوں سے تنگ کرتے ہیں پچاس کلومیٹر دور سے آئے ہوئے خواتین کو شناختی کارڈز کی ٹوکن نہیں دی جاتی اور انہیں انتظار کرنے کی تلقین کے بعد دن گزر جاتی ہیں لیکن شناختی کارڈز کی ٹوکن انہیں نہیں دی جاتی انہوں نے کہا کہ مبینہ طور پر الزام لگایا کہ سی ایف سی نادرا سنٹر میں موجود عملے کی رویہ قابل مذمت ہے اگر ان سے جائز کام بارے مطالبہ کیا جائے تو ان پر قسم قسم کی الزامات لگائے جاتی ہیں انہوں نے کہا کہ روپے دو کام کروا کے بیان پر نادرا عملے نے عمل کرکے غریبوں سے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے انہوں نے کہا کہ دو لاکھ آبادی سے زائد نفوس پر مشتمل قوم بازار ذخہ خیل اس جدید دور میں نادرا جیسے سہولت سے محروم ہیں عطاء اللہ آفریدی نے کہا کہ ایم این اے اقبال آفریدی اور صوبائی وزیر برائے اوقاف و مذہبی امور عدنان قادری سے اس سنگین مسئلہ پر ٹھوس اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا کہ بازار ذخہ خیل قوم پر رحم کرکے نادرا کا یہ مسئلہ حل کرائے تاکہ آئے روز اذیت و مشکلات سے بچ سکیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں