پاک افغان بارڈر طورخم پر پاکستانی نوجوان بیمار کاشف کو علاج کیلئے آنے کی اجازت دی جائے۔

Spread the love

پاک افغان بارڈر طورخم پر پاکستانی نوجوان بیمار کاشف کو علاج کیلئے آنے کی اجازت دی جائے۔ذہنی توازن کھو بیٹھا ہے افغان بارڈر نے پاکستان میں علاج کرانے کی تجویز دی ہے۔مراد شینواری
لنڈی کوتل علاقہ پیروخیل کے رہائشی کاشف خان افغانستان کے شہر جلال آباد میں محنت مزدوری کے عرض گئے تھے وہ رزق حلال کمانے اپنے ملک سے باہر گئے تھے کہ اچانک گزشتہ روز بیمار ہوگیا دوستوں نے نیزد جلال آباد اسپتال لے پہنچایاجہاں پر ڈاکٹرز نے ا ن کا معائنہ کیا اور ان کو مزید علاج کرانے کیلئے پشاورر منتقل کرنے کی تجویز دی کیونکہ وہاں پر ان کا علاج ممکن نہیں تھا اور ان کو جلد پاکستان منتقل کرنے کا مشورہ دیا جب ان کے دوستوں نے بیمار کاشف خان کو طورخم بارڈر پہنچایا سرحد پر مامور اہلکاروں نے ان کو آنے کی اجازت نہیں دی اور یوں بیمار کو آخر بہت منت و سماجت کے بعد مجبوراً جلال آباد واپس کردیا بیمارکے دوست مراد شینواری نے کہا کہ کاشف اب اعصابی بیماری میں مبتلا ہو ا ہے لیکن جلال آباد میں انکا علاج ممکن نہیں ہے اسلئے ڈاکٹرز نے انہیں علاج کرانے کیلئے پشاور منتقل کرنے کا مشورہ دیاانکا کہنا تھا کہ کاشف خان کا تعلق لنڈی کوتل کے علاقہ پیروخیل کے ایک غریب گھرانے سے ہے وہ محنت مزدوری کرنے آیاتھا انہوں نے حکومت پاکستان سے انسانی ہمدردی کی تحت علاج کی غرض اپنے وطن پاکستان کو آنے کی اپیل کی تاکہ ان کا علاج بروقت ہوسکیں۔
رابطہ نمبر
۔ Sajid
0730489732
Khaseb
0782207175

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں