پاکستان نشینل کونسل آف آرٹس آرٹسٹوں کے ساتھ امتیازی سلوک بند کریں۔شاکر ذیشان خٹک

Spread the love

آرٹسٹ حکومتی اقدامات اور بنیادی حقوق سے محرومی کا شکار ہے۔چیف آرگنائزر پختون کلچرل

یورپ(چیف اکرام الدین) چیف آرگنائزر پختون کلچرل شاکر ذیشان خٹک نے کہا کہ پاکستان نشینل کونسل آف دی آرٹس خیبر پختون خواہ، بلوچستان، فاٹا آرٹسٹوں کے ساتھ امتیازی سلوک بند کریں انہوں نے کہا کہ بلوچستان، خیبر پختون خواہ اور فاٹا آرٹسٹ حکومتی اقدامات و بنیادی حقوق سے محرومی کا شکار ہے جو افسوس ناک ہے حکومت وقت کی طرف سے آرٹسٹوں کے ساتھ کب تک ظلم و زیادتی ہوگی خیبر پختون خواہ، بلوچستان، اور فاٹا آرٹسٹوں کے ساتھ کئی سالوں سے حکومت اور پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس کی طرف سے ظلم جاری ہے کوئی پوچھنے والا نہیں کہ آرٹسٹوں کے ساتھ کیا ہو رہا ہے اور کیوں چیف آرگنائزر پختون کلچرل شاکر ذیشان خٹک نے بین الاقوامی گلوبل ٹائمز میڈیا یورپ کے ساتھ ایک اخباری بیان میں کہا کہ آرٹسٹوں کے مسائل و مشکلات کی طرف توجہ دینے کی اشد ضرورت ہے تا کہ آرٹسٹوں کے مسائل و مشکلات بروقت حل ہو سکے خیبر پختون خواہ حکومت، بلوچستان حکومت اور مرکزی حکومت بیماری میں مبتلا آرٹسٹوں کے علاج و معالجے کیلئے اہم اقدامات کریں تا کہ بیماری میں مبتلا آرٹسٹ صحت یاب ہو سکے۔انہوں نے کہا کہ آرٹسٹ ہمارے ملک کا عظیم ترین سرمایہ ہے آرٹسٹوں کی قدر کرنا حکومت وقت اور ہم سب کی اہم ذمہ داری ہے حکومت کی توجہ نہ دینے کی وجہ سے پختون ثقافت خاتمے کی طرف جا رہی ہیں جو افسوس کا مقام ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان نشینل کونسل آف دی آرٹس آرٹسٹوں کو بنیادی حقوق مہیا کرنے میں اہم کردار ادا کریں تا کہ پختون ثقافت کامیابی کے طرف گامزان ہو سکے اور ساتھ ساتھ پختون ثقافت کے فروغ میں اہم کردار ادا کریں انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس عالمی وبا جیسے حالات میں پاکستان نشینل کونسل آف دی آرٹس کوئی بھی فنکار کے ساتھ مالی مدد نہیں کیا جو آرٹسٹوں کے ساتھ کسی ظلم سے کم نہیں انہوں نے کہا کہ ابھی تک خیبر پختون خواہ، بلوچستان، اور فاٹا کے آرٹسٹ پاکستان نشینل کونسل آف دی آرٹس کی مالی مدد سے محروم ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں