الیکٹرانکس مصنوعات، موٹر سائیکلیں، جنریٹرز، موبائل فونز وغیرہ اقساط پر دینے کی آڑ میں سود کا کارروبار عروج پکڑنے لگا،

Spread the love

جہلم(چوہدری عابد محمود +عبدالغفارآذاد)جہلم شہر و گردونواح میں جگہ جگہ الیکٹرانکس مصنوعات، موٹر سائیکلیں، جنریٹرز، موبائل فونز وغیرہ اقساط پر دینے کی آڑ میں سود کا کارروبار عروج پکڑنے لگا، 40 ہزار روپے والا موٹر سائیکل قسطوں پر 65 ہزار روپے میں فروخت کیا جانے لگا، 25 ہزار روپے سود کی رقم وصول کرکے بااثر افراد سودی کارروبار کو فروغ دینے لگے، قانون نافذ کرنیوالے اداروں کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی، شہر سمیت چاروں تحصیلوں میں الیکٹرونکس مصنوعات ایل سی ڈیز، ایل ای ڈیز، فریج، اے سی، پنکھے، موٹر سائیکلیں، جنریٹرز، موبائل فونز وغیرہ قسطوں پر فروخت کے رجحان میں غیر معمولی اضافہ ہوچکا ہے، جبکہ اسی طرح موٹر سائیکلوں کی خرید و فروخت کا کارروبار کرنیوالے سینکڑوں بااثر افراد سود کی آڑ میں علاقہ مکینوں کو کنگال کرکے ان کو جمع پونجی سے محروم کر رہے ہیں، شہریوں نے چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جہلم سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں