جہلم تھانہ صدر پولیس نے چند روپوں کی خاطر غریب محنت کشوں کو منشیات کے مقدمات میں شامل کر کے کاروائیاں بنانی شروع کر دیں

Spread the love

جہلم(رانا نوید الحسن +عبدالغفارآذاد)جہلم تھانہ صدر پولیس نے چند روپوں کی خاطر غریب محنت کشوں کو منشیات کے مقدمات میں شامل کر کے کاروائیاں بنانی شروع کر دیں،میرا بیٹا بے گناہ ہے تفتیشی افسر، اے ایس آئی حضر سے روزِ قیامت حساب لوں گی، بیوہ کی دہائی، حکام بالا نوٹس لیں،متاثرہ خاتون ڈی پی او دفتر سے رجوع کریں میرٹ پر انصاف ہوگا۔ترجمان جہلم پولیس۔ تفصیلات کے مطابق روہتاس روڈ محلہ قیصر آباد کی رہائشی بیوہ خاتون مسرت بی بی نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرا بیٹا عرفان کاشف ولد بوستان خان جو کہ موٹر مکینک کا کام کرتا ہے کو نا جائز طور پر دن دیہاڑے چتن گاؤں سے تھانہ صدر پولیس نے گرفتار کر لیا اور میرے پتہ کرنے پر اے ایس آئی خضر نے بتایا کہ اس کے خلاف تحریری درخواست آئی ہے اور اسکے پاس ناجائز اسلحہ تھا جو دوران تفتیش اس نے بر آمدکروا دیا ہے،رات گئے اس نے ہوائی فائرنگ کی لیکن خضر اے ایس آئی نے اور ایس ایچ او ملک نثار نے ساز باز کر کے میرے بیٹے پر 1500گرام چرس کا جھوٹا مقدمہ درج کر دیا اور حوالات میں بند کر دیا میری اعلیٰ عدلیہ سمیت آئی جی پنجاب پولیس، آر پی او راولپنڈی اور ڈی پی او جہلم سے اپیل ہے کہ میں ایک غریب عورت ہوں اور لوگوں کے گھروں میں کام کاج کر کے اپنا اور اپنے بچوں کا پیٹ پال رہی ہوں کبھی تو یہ بھی وقت آجا تا ہے کہ ایک وقت کا کھانا بھی میسر نہیں ہوتا میرا بیٹا علاقے میں لڑائی جھگڑے کرتا رہتا ہے لیکن وہ منشیات فروش نہیں اگر وہ منشیات فروشی کرتا ہو تو میں لوگوں کے گھروں میں کام نہ کرتی، میرے گھر کی حالت کے بارے میں اہل علاقہ سے پوچھ سکتے ہیں میرے بیٹے پر منشیات کا جھوٹا مقدمہ ڈال کر اس کو پولیس تھانہ صدر نے آدی مجرم بنانے کی کوشش کی ہے میرے پاس تو اتنے پیسے نہیں کہ میں اس کیلئے وکیل کر سکوں انہوں نے مزید کہا کہ میں تاریخ پر اپنے بیٹے سے ملنے کے لیے ضلع کچہری گئی تو وہاں میرا سامنا اے ایس آئی خضر سے ہوا تو میں نے اسے کہا کہ تم نے ہم غریب لوگوں پر ظلم کیا ہے جس پر اے ایس آئی خضر مجھ سے معافی مانگنے لگا کہ مجھ سے غلطی ہو گئی ہے میں بہت جلد اس کو جیل سے چھڑوا لونگا، میری حکام بالا سے اپیل ہے کہ وہ تھانہ صدر کے ظلم کی آزاد انکوائری کروائیں تا کہ مزید کسی غریب کا بچہ جھوٹے مقدمہ سے بچ جائے اس حوالہ سے جب ترجمان جہلم پولیس اے ایس آئی عدیل سے بات ہوئی تو انہوں نے کہا کہ ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڑ تھانہ میں ہونے والی کسی بھی زیادتی کے خلاف رپورٹ ہونے پر فلفور ایکشن لیتے ہیں مسرت بی بی ڈی پی او جہلم کو درخواست دیں انشاء اللہ شفاف انکوائری کر کے انصاف مہیا کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں