خیبر میڈیکل یونیورسٹی انسٹیٹیوٹ آف ڈینٹل سائنسز کوہاٹ تباہی کے دہانے پر

Spread the love

کوہاٹ سے شبیر شینواری کی رپوٹ ۔خیبر میڈیکل یونیورسٹی انسٹیٹیوٹ آف ڈینٹل سائنسز کوہاٹ تباہی کے دہانے پر

خیبر میڈیکل یونیورسٹی کے زیر انتظام خیبر پختونخوا کے جنوبی اضلاع کا واحد ڈینٹل ہسپتال کے ایم یو انسٹیٹیوٹ آف ڈینٹل سائنسز کوہاٹ کرپشن اور اقربا پروری کی وجہ سے تباہی کے دہانے پر کھڑا ہے۔ ہسپتال میں نہ عوام کیلئے طبی سہولیات ہے نہ ڈینٹل کے ٹریننگ ڈاکٹروں کے لئے کوئی ٹریننگ ہے۔ ہسپتال کی تمام مشینری خراب پڑی ہے دانتوں کے علاج میں استعمال ہونے والی مٹیریل ناپید ہے جس کی وجہ سے غریب عوام علاج کیلئے عطائی ڈاکٹروں کا رخ کر رہے ہیں اور خیبر پختونخوا کے جنوبی اضلاع میں انفیکشیس سے بیماریاں پھیلنے کا بڑا ذریعہ بن چکے ہیں۔ ہسپتال میں علاج کی سہولیات میسر نہ ہونے کی وجہ سے ٹریننگ کرنے والے ڈینٹل ڈاکٹروں (ہاوس افیسرز) کیلئے ٹریننگ کے مواقع میسر نہیں جس کی وجہ سے ان کے مستقبل تاریکی کی طرف گامزن ہے۔
کالج کی باگ دوڑ ایک انتہائی نااہل پرنسپل کے ہاتھوں میں ہے، موصوف سے جب ہسپتال میں سہولیات کے فقدان اور ڈاکٹروں کی ٹریننگ کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے بڑی انوکھی منطق پیش کی اور ڈاکٹروں سے کہا کہ آپ لوگ خود اپنے پیسوں سے مٹیریل اور آلات لے کر آئے تاکہ آپ لوگوں کو ٹریننگ اور عوام کو علاج مل سکیں۔ اگر یہ کام ڈاکٹروں نے خود کرنا ہے تو پرنسپل کی کرسی پر آپ کو بیٹھنے کی کیا ضرورت اور ہسپتال کے کروڑوں روپے کے فنڈز کہاں صرف ہوتے ہیں؟
بڑے افسوس کے ساتھ ساتھ کوہاٹ کی کے منتخب نمائندے پہلے عوام کو ڈاکٹروں کے ساتھ لڑا کر صرف اپنی سیاست چمکا رہے ہے جبکہ اصل مسائل کی طرف توجہ ہی نہیں دے رہے۔
ہمارا وزیر صحت صحت وائس چانسلر خیبر میڈیکل یونیورسٹی سٹی اور کوہاٹ کے منتخب نمائندوں سے درخواست ہے کہ خدارا کوہاٹ کے ہسپتالوں کی حالت زار پر توجہ دیں عوام پر ترس کھائیں اور عوام کو ان کی دہلیز پر طبی سہولیات فراہم کریں۔
پیر تنویر شاہ سماجی کارکن کوہاٹ ان مسائل پر ہر فورم پر آواز اٹھائے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں