ہڑپہ یہ سڑک و پر تجاوزات کی بھرمار لوگوں کا پیدل چلنا بھی محال آل ان تظام یہ کی مغفرت یا ملی بھگت ڈپٹی کمشنر سے کاروائی کا مطالبہ

Spread the love

جی ٹی روڈ پر موٹر سائیکل رکشہاور ویگن اسٹینڈ نائی والا روڈ پر فروٹ اور سبزی فروش ریڑھیوں کی بھر مار ٹر یفک کا جام اور ٹریفک وارڈن کا غائب رہنا معمول بن گیا عوامی و سماجی حلقے۔۔۔۔

جی ٹی روڈاور نائی والا روڈپر سبزی فروش موٹرسائیکل رکشہ اور دکانداروں نے تجاوزات کی بھرمار کر رکھی ہے جس کی وجہ سے سودا سلف لینے آنے والے مردوخواتین انتہائی کرب سے گزرتے ہیں جب ان کے لئےبازار میں پیدل چلنا بھی دشوار ہو جاتا ہےعوام کی ان مشکلات سے غافل یا سازباز خواب خرگوش کے مزے میں مد ہوش انتظامیہ نے لوگوں کو لینڈ مافیا کے رحم و کرم پر چھوڑ رکھا ہےعوامی و سماجی حلقوں نے ڈپٹی کمشنر ساہیوال سے سارے معاملے کا نوٹس لے کر ذمہ داران کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے مزیدکہا ہےکہ چند ماہ قبل تجاوزات کے خلاف آپریشن ہوا اور اڈےکی رونق بحال ہوئیں ٹریفک کی روانی کو برقرار رکھنے کے لئے ہڑپہ اسٹیشن چوک میں ٹریفک وارڈن کی ڈیوٹی لگائی گئی نیشنل ہائی وے کی جانب سے نو پارکنگ کے بورڈ نصب کیے جانے کے باوجود ٹریفک کا جام رہنا انتظامیہ کی غفلت ملی بھگت اور ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے اس کی بڑی وجہ ہڑپہ میں تعینات ٹریفک وارڈن کا چوک سے ہٹ کر دیگر جگہوں پر کھڑے ہوکر چالانوں کا ٹارگٹ پورا کرنا ہے جس کی وجہ سے دن دیہاڑے 110 فٹ چوڑے نائیوالا روڈ جو پہلے ہی تجاوزات کی وجہ سے سکڑ کر 35 سے 40 فٹ رہ گیا ہے اور وہاں پر بھی فروٹ سبزی رکشہ والوں کا قبضہ ہے )(چینی آٹے سریا ٹی آر گارڈر )(اور دیگر سامان سے لدھے بڑے بڑے ٹرک روڈ پر کھڑے ہوکر لوڈنگ ان لوڈنگ کرتے ہیں جس کی وجہ سے بھی نائیوالا روڑ مکمل طور پر بند ہوجاتا ہے جس سے پیدل چلنے والے راہگیروں سمیت موٹر سائیکلوں اور دیگر گاڑیوں پر۔ سوار مسافر روڈ بند اور ٹریفک جام ہونے سےانتہائی مشکلات کا شکار ہوتے ہیں اس لئے اس سارے معاملے کا جائزہ لیتے ہوئے ناصرف تجاوزات کے خلاف گرینڈ اور مکمل آپریشن کیا جائے اورہڑپہ میں تعینات ٹریفک وارڈن کو ٹریفک کی روانی میں رکاوٹ غیر قانونی ویگن اور رکشہ اسٹینڈز کے خلاف موثر کاروائی کرنے کا پابند بھی بنایا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں