جہلم پریشر ہارن کا استعمال ڈپریشن کے مریضوں کی تعداد میں غیر معمولی اضافہ

Spread the love

جہلم(چوہدری عابد محمود +مرزاکفیل بیگ کیفی)جہلم پریشر ہارن کا استعمال ڈپریشن کے مریضوں کی تعداد میں غیر معمولی اضافہ۔ شہر و گردونواح میں شور شرابا کرنیوالی گاڑیوں نے مریضوں سمیت بزرگوں کو ڈپریشن کا مریض بنادیا، پریشر ہارن کیوجہ سے شہریوں کا سکون تباہ ہونے لگا، راتوں کی نیندیں تک حرام ہو گئیں، ہسپتالوں میں مریض بھی محفوظ نہیں رہے،شہریوں کا ڈی پی او، ڈی ایس پی ٹریفک سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق اندرون شہر و گردونواح میں گاڑیوں، ٹریکٹر ٹرالیوں پر نصب پریشر ہارن کے بے جا استعمال نے ڈپریشن کے مریضوں میں حیرت انگیر اضافہ کر دیا ہے۔شہری گھروں کے اندر پریشر ہارن کی خوفناک آوازیں سننے کے بعد خوفزدہ ہو جاتے ہیں،جس سے نہ صرف انکی قوت سماعت اور اعصاب متاثر ہورہے ہیں بلکہ ذہنی امراض میں مبتلا ہور ہے ہیں۔ٹریفک پولیس کی نااہلی کیوجہ سے شہر اور قصبات میں پریشر ہارن کے استعمال نے علاقہ مکینوں کی زندگیاں اجیرن بنا دی ہیں گاڑیوں، ڈمپرز، ٹرکوں پر لگے پریشر ہارن کیوجہ سے ڈپریشن کے مریضوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔شہریوں نے بتایا کہ ہارن اس قدراونچی آواز اور خوفناک ہوتے ہیں کہ سوئے ہوئے بچے تک ڈر سے جاگ جاتے ہیں مگر ٹریفک پولیس انکے خلاف کسی بھی قسم کی کارروائیاں کرنے سے گریزاں ہے۔شہریوں نے ڈی پی او، ڈی ایس پی ٹریفک سے مطالبہ کیا ہے کہ اندرون شہر اور جی ٹی روڈ پر چلنے والی گاڑیوں، بسوں، ٹرکوں پر نصب پریشر ہارن کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے تاکہ شہری زہنی ڈپریشن کا شکار ہونے سے بچ سکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں