جہلم شہر و گردونواح میں نان بائیوں اور تندور مالکان نے جنگل کا قانون نافذ کر دیا

Spread the love

جہلم(چوہدری عابد محمود +شیخ ذوالفقار علی کاشف)جہلم شہر و گردونواح میں نان بائیوں اور تندور مالکان نے جنگل کا قانون نافذ کر دیا، غیر معیاری میدہ اور آٹاکا استعمال جاری، نان اور روٹی کا سائز وزن بھی کم، من مانے نرخوں کی وصولی جاری، شہری پریشان، شہریوں کا ارباب اختیار سے نوٹس لینے کا مطالبہ، تفصیلات کے مطابق شہر سمیت مضافاتی علاقوں میں زیادہ تر سرکاری ملازمین سمیت مزدور طبقہ آباد ہے اور شدید مہنگائی نے پہلے ہی غریب کا بھرکس نکال کے رکھ دیا ہے۔ 2 وقت کی روٹی پوری کرنا عام آدمی کے بس کی بات نہیں، بیشتر افراد تندور سے روٹی خریدتے ہیں، نان بائی اور تندور مالکان نے گندم کی سرکاری قیمت مقرر ہونے کے بعد نان 10 روپے کی بجائے 15 روپے روٹی 7 روپے کی بجائے 10 روپے کم وزن میں فروخت کرنا شروع کررکھی ہے، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس و ضلعی انتظامیہ کی عدم توجہی کیوجہ سے تندور مالکان نے غیر معیاری میدہ اور آٹے کا استعمال کر کے من مانے نرخوں پر روٹی و نان کی فروخت شروع کررکھی ہے، جس کے استعمال سے شہری پیٹ، معدہ کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں، شہریوں کا کہنا ہے کہ پرائس کنٹرول مجسٹریٹس اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے مبینہ خاموشی اور چیک اینڈ بیلنس کا نظام مفلوج ہونے کیوجہ سے نان بائیوں کو کھلی چھٹی مل چکی ہے، غریب شہریوں نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں