خانہ فرہنگ ایران قونصلیٹ پشاور میں امام خمینی کی 32 ویں برسی کا انعقاد کیا گیا

Spread the love

جس میں سیاسی و سماجی، صحافی اور دیگر شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے بھرپور شرکت کی۔

پشاور(نمائندہ وصال احمد)گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق خانہ فرہنگ ایران کونصلیٹ پشاور میں امام خمینی رحمتہ اللّہ علیہ کی 32ویں برسی کے حوالے سے کانفرنس منعقد ھوئی اور تقریب میں سیاسی و سماجی صحافیوں، پروفسیرز و دیگر شعبوں کے شرقاً کے ساتھ شامل شخصیات میں پاکستان مسلم لیگ ق صوبائی ترجمان خیبرپختونخوا صفدر خان باغی ،اسلامک ریپبلک افغانستان قونصلیٹ جنرل پشاور کے فرسٹ سیکرٹری سید جمیل احمد درویشی،ایرانی قونصلیٹ جنرل پشاور سکینڈ قونصلر سید ابراھیم دھنادی ،خانہ فرھنگ صدر پشاور ڈائریکٹر جنرل مہران اسکندریان، قالم نگار پروفیسر شہید سروردی،چیئرمین پروفیسر فخر السلام، ڈیپارٹمنٹ چیئرمین پروفیسر جمیل احمد ،چیرمین بین المذاہب ھم آہنگی مولانا شعیب محمد،چینا کوریڈور کلچرل زون پشاور سی ای او امجد عزیز ملک، علامہ عابد حسین شاکری جمعیت علما اسلام جنرل سکریٹری پشاور طارق آفریدی نے شرکت کی اور امام خمینی رحمتہ اللّٰہ علیہ کی خدمات اور انکی زندگی اور اعلی سیاسی و دینی وسماجی خدمات پر روشنی ڈالی۔صوبائی ترجمان صفدر خان باغی نے کہا کہ پاکستان ایران اور افغانستان ملکر اس خطے میں مزید امن استحکام پیدا کر سکتے ہیں اور ہمیں اتحاد بین المسلمین کے جھنڈے تلے اتفاق اتحاد بھائی چارہ کے ساتھ اچھے ہمسایہ دار بننا ہوگا۔ انہوں نے کہا تینوں ہمسایہ ممالک سٹی ایکسچینج ڈائلاگ شروع کرنے ہونگے باقاعدہ ایک ریڈیو چینل تشکیل دیا جائے اور تین برادر اسلامی ممالک ٹورازم اور مختلف فیسٹیول کروائے جائیں جن میں مذہبی، صحافتی،کلچرل و سپورٹس ایونٹ کا انعقاد ہونے چاہیے تاکہ تینوں ممالک کے نوجون نسل کو برادر اسلامی ھمسایہ ممالک کی تہزیب و ثقافت سے روشناس ہو سکے۔ تینوں برادر اسلامی ممالک ایک ایک شہر کا نام اپنے ملکوں میں رکھکر اپنے قومی کلچرل تقریبات کا اہتمام کرے جیسا کہ پشاور چینا کوریڈور کلچرل زون ایک زندہ جاوید مثال ہے۔امام خمینی رحمۃ اللّٰہ علیہ کی اعلیٰ خدمات اور عظیم انقلابی سرگرمیوں و کامیابیوں پر انکو تمام شرکاء نے خراج عقیدت پیش کیا اور انکی سیاسی نظریات اور فلسفہ پر ہمسایہ ممالک کی نوجوان نسل کو بہت کچھ سیکھنا ہوگا۔ امام خمینی رحمتہ اللّٰہ علیہ کی عظیم قربانیوں و خدمات کو فراموش نہی کیا جاسکتا ۔انکی برسی کے حوالے سے یہ کہونگا کہ انکی پوری زندگی اور انکی اعلیٰ خدمات پر جتنی روشنی ڈالیں کم ہے ہمیں شاھد مزید وقت اور دن درکار ہونگے آخر میں تمام شرکاء نے انکی بخشش و مغفرت کیلئے خصوصی دعا کی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں