پاراچنار میں زرعی ریسرچ سنٹر کی جانب سے کسانوں کیلئے ایک روزہ تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا

Spread the love

جس میں ضلع بھر سے ساٹھ سے زائد کسانوں نے شرکت کی۔

پاراچنار(نمائندہ خصوصی)گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق پاراچنار میں زرعی ریسرچ سنٹر کی جانب سے کسانوں کیلئے ایک روزہ تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں ضلع بھر سے ساٹھ سے زائد کسانوں نے شرکت کی ڈائریکٹوریٹ آف ایگریکلچر ریسرچ سنٹر برائے ضم شدہ اضلاع اور زرعی ریسرچ سنٹر پاراچنار کے تعاون سے ماحول دوست کیڑوں کی افزائش اور دشمن کیڑوں کے خاتمے سمیت زہر کے کم سے کم استعمال سے فصلوں اور باغات کو بچانے کے طریقے سکھائے گئے جس سے کسان اور زمیندار بھر پور مستفید ہوگئے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے اے آر آئی سوات ڈاکٹر فضل مولا ، پی آر او شاہد خالد ، پی او پشاور محمد طاہر شاہ اور زرعی ریسرچ آفیسر ڈاکٹر تاجر حسین نے بتایا کہ فروٹ فلائی نہ صرف پاکستان بلکہ ایک بین الاقوامی مسلہ ہے اور اس کیڑے کی وجہ سے دنیا بھر میں باغات اور سبزیوں کو ناقابل تلافی نقصان ہورہا ہے اس ورکشاپ کے اہتمام کا مقصد ان ضرر رساں کیڑوں کی بروقت تدارک اور ماحول دوست کیڑوں اور زہر کے کم سے کم استعمال سے میوہ جات اور سبزیوں تباہی سے بچانا ہے انہوں نے کہا کہ پسماندہ اور دور دراز اضلاع کے زمیندار اور کسان ان طریقوں کو اپنا کر فصلوں اور میوہ جات کو تباہی اور زمینداروں کو معاشی بدحالی سے بچاسکتے ہیں اور ماحول دوست طریقے اور زہر کی کم سے کم استعمال سے علاقے کو زہر سے پاک میوہ جات اور سبزیاں فراہم ہوگی ورکشاپ میں شامل زمینداروں نے ورکشاپ کو انتہائی مفید اور اہم قرار دیتے ہوئے مستقبل میں بھی اس قسم ورکشاپس کے انعقاد کا مطالبہ کیا۔ورکشاپ کے اختتام پر زیر رسرچ سنٹر پاراچنار کے آفیسر ڈاکٹر تاجر حسین نے ورکشاپ کے شرکاء کا شکریہ ادا کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں