پی ٹی آئی خواتین اسلام آباد ایک عرصہ سے ناانصافی کا نشانہ بن رہی ہیں

Spread the love

پی ٹی آئی خواتین اسلام آباد ایک عرصہ سے ناانصافی کا نشانہ بن رہی ہیں۔جبکہ ہر تحریک میں سب سے زیادہ قربانیاں اسلام آباد کی خواتین کی ہیں

وہ دھرنا ہو یا لاک ڈاؤن،یا کوئی احتجاج یا پھر دوسرے شہروں سے آئی ہوئی دوسری خواتین کی مہمان نوازی۔
مگر افسوس کہ پی ٹی آئی خواتین اسلام آباد پہ ہمیشہ دوسرے صوبوں کی خواتین کو فوقیت دی گئی۔ جنرل الیکشن میں 3 حلقوں میں سے کسی ایک میں بھی کسی خاتون کو ٹکٹ کا موقع نہیں دیا گیا۔اسی مناسبت سے مخصوص نشست پر بھی کوئی پارٹی ورکر کی رسائی نہیں۔ اور جو خاتون مخصوص نشست پر آئی اس کو پی ٹی آئی کی کی خاتون ورکر سے یا اسلام آباد کی عورت کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں۔
اسی طرح ویمن ونگ سنٹرل کی جو صدر لی گئی وہ بھی اسلام آباد سے نہیں۔احالانکہ سنٹرل کی پریزیڈنٹ سنٹر سے لینی چاہئے،اسی لئے اسکو بھی کیپٹیل کی گراونڈ لیول کی خواتین کی محنت اور پارٹی میں کردار کا اندازہ نہیں،نہ اسکو الیکشن میں پارٹی خواتین کے رول کا اندازہ ہے جس کی وجہ سے اسلام آباد کی پارٹی ورکر لاوارث ہے۔

*میں پی ٹی آئی کی قیادت سی مطالبہ کرتی ہوں کہ ویمن ونگ کی سنٹرل پریذیڈنٹ السلام آباد سے لی جائے۔تاکہ اسلام آباد کی گورنمنٹ کی پوسٹس پہ میرٹ اور محنت کی بناد پر تقرری کی جائے نہ کہ پیرا شوٹرز اور من پسندی اور ایوانوں میں گھمایء جانے والی غیر متعلقہ خواتین کی۔

*پارٹی ورکر عمران خان کے نظریات کے پابند ہیں نہ کہ کسی عہدیدار کے،یہاں ہر عہدیدار مرشد بننے کی کوشس کر رہا ہے۔ قابلیت اور عہدوں کی تقسیم اپنی مرشد کی چاپلوسی بے جا حمایت اور اسکا دم چھلہ بننے میں منتقل ہو کر رہ گئ ہے۔جس وجہ سے مرشد اپنے دم چھلوں کو ایوانوں میں متعارف کروا کے گورنمنٹ سیٹوں پر اپنے مفاد کے لئے تقرری کرواتے ہیں۔

۔۔۔پارٹی کے نظرے کی بقا کیلئے ضروری ہے کی ورکر بلخصوص خواتین ورکر کے تحفظات کو دور کیا جائے تاکہ پارٹی ورکر الیکشن میں بھرپور حصہ لیں۔
پی ٹی آئی کی سینئیر رہنما #فرخندہ_کوکب کا اسلام آباد کی خواتین کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں پر اظہار خیال

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں