ہندو جنرل پنچائت کے صدر لعل چند سیتلانی کی گرفتاری اور تشدد کے واقعے کی مذمت

Spread the love

جیکب آباد(نامہ نگار) پاکستان پرچم پارٹی کے چیئرمین ملک الطاف حسین نے ہندو جنرل پنچائت کے صدر لعل چند سیتلانی کی گرفتاری اور تشدد کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہندو جنرل پنچائت جیکب آباد کے صدر لعل چند سیتلانی اور ان کے بیٹے کو گذشتہ دنوں جس طرح سے پولیس نے گرفتار کیا اور بعدازاں پولیس تھانے میں لے جاکر اس کو تشدد کا نشانہ بنا یا گیایہ انتہائی افسوسناک اور قابل مذمت ہے، انہوں نے کہا کہ قانون کی بالادستی اور انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے لعل چند سیتلانی کی طرف سے پریس کانفرنس میں لگائے گئے الزامات اور اقلیتی برادری کے لیے جن تحفظات کا اظہار کیا گیا ان کی شفاف تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دی جائے تاکہ صورتحال کی مکمل وضاحت ہوسکے، انہوں نے کہا کہ ایس ایس پی جیکب آباد شمائل ریاض ملک جن کے بارے میں شہریوں میں بہت زیادہ شکایات پائی جاتی ہیں اور وہ شہریوں کا اعتماد کھوچکے ہیں لہذا آئی جی سندھ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ان کا فوری تبادلہ کیا جائے انہوں نے کہا کہ ہم لعل چند سیتلانی سے مکمل اظہار یکجہتی کرتے ہوئے انہیں یقین دلاتے ہیں کہ دین اسلام اور پاکستان کا آئین تمام اقلیتوں کو تحفظ فراہم کرتا ہے اور ہم ہر حال میں بلاامتیاز تمام مظلومین کی مدد کرتے رہیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں