جیکب آباد میں قبضہ مافیا سرگرم،

Spread the love

جیکب آباد(نامہ نگار)جیکب آباد میں قبضہ مافیا سرگرم، واٹر سپلائی کی ٹینکی کو مسمار کرنے کا بہانا بنا کر قدیمی گدائی لائبریری، ایکسائیز آفیس سمیت اطراف میں قائم عمارتوں کو15روز میں خالی کرانے کا نوٹس جاری، ٹینکی کو مسمار کرنے کی آڑ میں قبضہ مافیا قبضہ کرنا چاہتی ہے، نصف صدی سے یہاں آباد ہیں میونسپل کو کرایہ ادا کرتے ہیں خالی نہیں کریں گے: علاقہ مکین تفصیلات کے مطابق جیکب آباد میں انتظامیہ کی جانب سے ایک طرف تجاوزات کے خاتمے کے نام پر آپریشن کیا جارہا ہے تو دوسری جانب انتظامیہ کے ساتھ ملکر قبضہ مافیا قبضے کرنے کے لیے سرگرم ہوچکی ہے،میونسپل کمیٹی جیکب آباد کے ایڈمنسٹریٹر نے شہر کے وسط میں اولڈ میونسپل آفیس کے قریب قائم واٹر سپلائی کی ٹینکی کو مسمار کرنے کا بہانا بنا کر قدیمی گدائی لائبریری اور ایکسائیز آفیس، ڈسپینسری، یوسی آفیس سمیت اطراف میں نصف صدی سے قائم عمارتوں کو 15روز میں خالی کرنے کا نوٹس جاری کردیا ہے، میونسپل کے ایڈمنسٹریٹر کی جانب سے جاری نوٹس میں کہا گیا ہے کہ اولڈ میونسپل آفیس کے اندر قائم قدیمی واٹر ٹینکی زبون حال ہوچکی ہے جو کسی بھی وقت گر سکتی ہے اس لیے ٹیکنیکل کمیٹی نے اسے مسمار کرنے کا فیصلہ کیا ہے لہذا اس کے ارد گرد اور اطراف میں قائم عمارتیں جن میں قدیمی گدائی لائبریری اور ایکسائیز آفیس سمیت دیگر عمارتیں بھی شامل ہیں کو خالی کیا جائے،معلوم ہوا ہے کہ مقامی بااثر افراد واٹر سپلائی ٹینکی کو مسمار کرنے کا بہانا بنا کر اطراف اور قریبی عمارتیں خالی کرانے کے بعد وہاں قبضہ کرنا چاہتے ہیں اور اس سلسلے میں انہوں نے میونسپل کمیٹی کے حکام کے ذریعے شہریوں کو عمارتیں خالی کرنے کے لیے نوٹس جاری کرائے جارہے ہیں، کچھ عرصہ قبل بھی گدائی لائبریری اور ایکسائیز آفیس پر قبضہ کی کوشش کی گئی تھی لیکن شہریوں کے احتجاج کے بعد وہ کوشش ناکام بنا دی گئی تھی لیکن قبضہ مافیا کئی سالوں سے اس جگہ پر قبضہ کرنے کے لیے مختلف حربے استعمال کررہی ہے، میونسپل کمیٹی کی جانب سے نوٹس جاری کرنے پر مقامی لوگوں نے احتجاج کیا ہے، شہریوں غلام علی، محمد رضا، طاہر علی اور دیگر کا کہنا ہے کہ ٹینکی کو مسمار کرنے کی آڑ میں ہمیں بے گھر کرکے یہاں قبضہ کرنے کی سازش کی جارہی ہے ہم نصف صدی سے یہاں آباد ہیں اور میونسپل کو باقاعدگی کے ساتھ کرایہ بھی ادا کرتے ہیں لیکن اس کے باوجود ہمیں نوٹس جاری کرنا قابل مذمت ہے ہم کسی صورت اپنے گھر اور دوکان خالی نہیں کریں گے اگر ہمارے خلاف کاروائی کی گئی تو شدید مزاحمت کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں