سابق ایم این اے کی ثالثی پر ہند وپنچائت کے صدر اورصوبائی مشیر میں مذاکرات

Spread the love

جیکب آباد(نامہ نگار) سابق ایم این اے کی ثالثی پر ہند وپنچائت کے صدر اورصوبائی مشیر میں مذاکرات، رنجشیں اور غلط فہمیاں ختم، صوبائی مشیر ہندو برادری کو منانے جائیں گے، ایس ایس پی کو ہٹایا جائے گا، لعل چند اپنی سیل کی گئی دوکان کھولیں گے معاملات طے۔ تفصیلات کے مطابق ایس ایس پی جیکب آبا دکی ذیادتیوں کے خلاف ہندو پنچائت کی جانب سے دو ہفتوں سے جاری احتجاج کے بعد سابق ایم این اے بابل جکھرانی کی ثالثی پر انکے بنگلے پر ہندو پنچائت کے صدر لعل چند سیتلانی اور صوبائی مشیر اعجاز جکھرانی میں مذاکرات ہوئے دونوں نے ایک دوسرے سے گلے شکوے کئے جس کے بعد رنجشیں اور غلط فہمیاں ختم کی گئیں لعل چند اور اعجاز جکھرانی کو گلے ملوایا گیااور مسئلے کو حل کرنے کے لئے معاملات طے کئے گئے صوبائی مشیر ناراض ہندو برادری کو منانے ہندو پنچائتی ہا ل جائیں گے اور ایس ایس پی جیکب آباد شمائل ریاض کا تبادلہ کروایا جائے گا لعل چند سیتلانی کی سیل کی گئی کھاد کی دوکان کھولی جائے گی، ہندو پنچائت کی جانب سے احتجاج ختم کرنے کی صوبائی مشیر کو یقین دہانی کرائی گئی، اس سلسلے میں ہندو پنچائت کے صدر لعل چند سیتلانی نے بتایا کہ بابل خان نے بنگلے پر بلایا تھا، اس لیے ان کے پاس گیا تھا جہا ں مذاکرات ہوئے، ایس ایس پی کو ہٹانے کے لئے مہلت مانگی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں